451

بارسلونا میں ٹیکسی یونین کی ہڑتال ساتویں روز میں داخل،ٹرانسپورٹ کا نظام درہم برہم

بارسلونا(جواد چیمہ)بارسلونا میں آن لائن ٹیکسی سروسز اوبر اور کیبی فائی کے خلاف ٹیکسی یونین کی ہڑتال ساتویں روز میں داخل میں ہو گئی۔ گزشتہ روز ٹیکسی یونین کی منسٹری آف ٹرانسپورٹ ہسپانیہ کے ساتھ ہونے والے مذاکرات بغیر کسی نتیجہ کے ختم ہوگئے تھے۔ٹیکسی ایسوسی ایشن ایلیتے کے صدر ٹیٹو الباریز نے مذاکرات کے اختتام پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ٹیکسی سیکٹر کا ایک نقاطی مطالبہ ہے کہ 1/30 (30ٹیکسیوں کے بعد ایک VTC لائسنس )کا قانون پاس کر کے اس پر فوراً عمل درآمد کروایا جائے اور زائد جاری شدہ VTC لائسنس کوفوری منسوخ کیا جائے۔ منسٹری نے ستمبر تک کا وقت مانگا ہے اور یہ ہمیں منظور نہیں ہے۔

آج دوبارہ مذاکرات کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ مرکزی گورنمنٹ کی اجازت پر سٹی گورنمنٹ اس حوالے سے قانون سازی کر کے اس پر عمل درآمد کروائے گی۔بارسلونا کے علاوہ ان سات دنوں میں سپین کے باقی بڑے شہروں میں بھی ہڑتالیں اور دھرنے دئیے جارہے ہیں جس سے پورے سپین کا زمینی رابطےکا نظام درہم ہو کر رہ گیا ہے۔ہڑتال اور دھرنے میں شریک پاکستانی کمیونٹی جہاں کھانے پینے کی اشیا اپنے لوگوں کو مہیا کر رہے ہیں وہاں یہ اشیاء ہسپانوی ٹیکسی ڈرائیورز کو بھی فری دی جا رہی ہیں جس سے مثبت پاکستانی امیج کو فروغ مل رہا ہے۔پاکستانی ٹیکسی ایسوسی ایشنزکے مختلف ممبران نے جنگ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم پر عزم ہیں کہ ہڑتال کا نتیجہ ٹیکسی یونین کے حق میں نکلے گا اور یہ ہڑتال تب تک جاری رہے گی جب تک حکومت زائد VTC لائسنس کی منسوخی اور روک تھام کے لئے کوئی قانون سازی نہیں کرتی۔ گفتگو کرنے والوں میں ڈاکٹر ہما جمشید ،سید شیراز شاہ، عمران ساہی، شہزاد اکبر، چوہدری شہباز کٹھانہ اور رضا چوہان شامل تھے۔

دوسری جانب سیاسی جماعت سیودادانس کے صدر البرٹ ریویرا نے بلدیاتی(اجنتامنت) سطح پر vtc کے معاملے پر اختیارات منتقل کرنے کی مخالفت کر دی۔پریس کانفرنس میں انہوں نے اس بات پر زور دیا ہے کہ اجنتامنت کو لوکل سطح پر قوانین میں تبدیلی کا حق نہیں دینا چاہیے بصورت دیگر حکومت کو 50 مختلف قوانین دیکھنے کو ملیں گے ۔ریویرا نےکہا کہ وہ ہر ایسے کمیشن کی حمایت کریں گے جو نیشنل سطح پر ٹیکسی ایسوسی ایشن اور وی ٹی سی کے مابین قانون سازی پر ہو جس میں دونوں حریف متوازی طور کوئی ایسی قانون سازی کر سکیں جو برابری کی سطح پر ہواور جو جاری شدہ لائسنس پر پابندی یامنسوخی پر مبنی نا ہو۔

البرتو ریویرا نے منسٹر ٹرانسپورٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس معاملہ پر اٹھائے جانے والے تمام اقدامات اور ایکشنز کی تفصیل اپوزیشن پارٹی کو دیں تاکہ کسی ایک نقطہ پر باہمی اتحاد ہو سکے،انہوں نے اجنتامنت دی بارسلونا کو کہا ہے کہ ایسے وعدے نہ کیے جائیں جن پر عمل کرنا ممکن نا ہو۔ریویرا نے پیدرو سانچز کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے یہ بھی کہا کہ وہ ماریانو راخوئی کی طرح حکومت نا چلائیں۔انہوں نے ہڑتال کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ یہ شہری کا حق ہے کہ پوری آزادی سے شہر میں گھوم پھر سکے جبکہ ایسا نہیں ہے۔ہڑتال کرنا ٹیکسی سیکٹر کا حق ہے لیکن وی ٹی سی گاڑیوں کی توڑ پھوڑ اور ڈائیورز کو ہراساں کیا جانا خود ٹیکسی سیکٹر کو داغدار کرنے کے مترادف ہے۔

خبر کو سوشل میڈیا پر شئیر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں