634

روس کو پیچھے دھکیلنے کے لئے جاری بلیک میلنگ کی کاروائیوں کی ہم شدید مذمت کرتے ہیں: ریابکوف

ماسکو(ورلڈ پوائنٹ نیوز) روس نے امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے “درمیانی مسافت کے جوہری میزائل سمجھوتے ” سے دستبردار ہونے سے متعلق بیان کی مذمت کی ہے۔

روس کے نائب وزیر خارجہ سرگئی ریابکوف نے روسی خبر رساں ایجنسی کے ساتھ بات چیت میں کہا ہے کہ ٹرمپ کے بیان سے متعلق صورتحال کے جائزے کے لئے وقت کی ضرورت ہے۔ ایسے فیصلے جذباتی جوش و خروش میں نہیں لئے جانے چاہئیں۔

ریابکوف نے کہا ہے کہ روس اپنے اسٹریٹجک استحکام کے تحفظ کے لئے بین الاقوامی سلامتی اور جوہری اسلحے کے شعبے میں ایک اہم مقام پر ہے اور اسے اس شعبے میں پیچھے دھکیلنے کے لئے جاری بلیک میلنگ کی کاروائیوں کی ہم شدید مذمت کرتے ہیں۔

ریابکوف نے کہا ہے کہ آج امریکہ کے قومی سلامتی کے مشیر جون بولٹون اہم مذاکرات کے لئے ماسکو کے سرکاری دورے پر تشریف لا رہے ہیں اور ہمیں امید ہے کہ وہ ہمیں اس معاملے میں ٹھوس معلومات فراہم کریں گے۔

واضح رہے کہ امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکہ اور روس کے درمیان طے شدہ “درمیانی مسافت کے جوہری میزائل سمجھوتے “کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ “ہم اس سمجھوتے کے مستحکم فریق بن گئے، ہم نے سمجھوتے کا احترام کیا لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ روس اس سمجھوتے کا احترام نہیں کر سکا لہٰذا ہم سمجھوتے کو منسوخ کر دیں گے اور اس سے دستبردار ہو جائیں گے۔

خبر کو سوشل میڈیا پر شئیر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں