495

سعودی عرب کے شہر ریاض کے مضافاتی علاقے میں مقیم تارکین وطن پاکستانی گزشتہ 2 سالوں سے بے یار و مدد گار

ریاض( ورلڈ پوائنٹ ) سعودی عرب کے شہر ریاض کے مضافاتی علاقے میں مقیم تارکین وطن پاکستانی گزشتہ 2 سالوں سے بے یار و مدد گار انتہائی سخت سردی میں شہر سے دور دراز کیمپوں میں مقیم ہیں۔ پاکستانیوں کے پاس کھانے اور پینے کے لئے بھی کچھ نہیں بچا۔ کیمپ میں پناہ گزین پاکستانیوں نے اپنی روداد سناتے ہوئے بتایا کہ انکو 2 سال سے کمپنیوں نے تنخواہیں تک نہیں دیں۔

انکے اقامے ویزوں کی مدت اور کچھ افراد کے پاسپورٹس کی معیاد بھی ختم ہو چکی ہیں ۔ اور ہم نے 2 سالوں سے پیسوں کا منہ بھی نہیں دیکھا۔ گرمی سردی آندھی طوفان یہاں نہ بجلی ہے نہ پانی اور نہ ہی ہیٹر ہیں اور نہ ہی اے سی ہم سب دوسرے ممالک کے پناہ گزینوں کیساتھ اس کیمپ میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں۔ بوجہ شرمندگی اور اپنے ملک کی بدنامی کیوجہ سے کسی سے کو ئی امداد یا کھانے پینے کی اشیاء بھی نہیں مانگ سکتے اگر ہم میں سے کوئی بیمار ہو جائے تو وہ ڈاکٹر کے پاس بھی نہیں جا سکتا۔

یہ باتیں کیمپ میں محصور محبان وطن پاکستانیوں نے آپو ورلڈ مڈل ایسٹ کے وائس چئیرمین محمد یوسف خالد اور انکی ٹیم کو بتائیں۔ آپو ورلڈ سعودیہ کی ٹیم آج اپنی مدد آپ کے تحت انکو کھانے پینے کی اشیاء ملبوسات اور ابتدائی طبی امداد کی دوائیاں پہنچائیگی ۔ آپو ورلڈ سعودیہ کی ٹیم نے سفارتخانہ پاکستان اور حکومت پاکستان سے اپیل کی ہے کہ ان پاکستانیوں کو بروقت امداد فراہم کرنے کیساتھ ساتھ انکو پاکستاں انکے گھروں میں بھی فورا واپس بھجوایا جائے۔ آپو ورلڈ کے وائس چئیرمین محمد خالد یوسف نے جب ان پاکبانوں سے اپنی ٹیم کے ہمراہ ان سے ملاقات کی تو وہ جاتے ہوئے اپنے گھر سے کچھ گرم کپڑے بطور امداد اپنے ساتھ لے گئے تھے ۔

ضرورت مندوں کو کپڑے تقسیم کر دینے کے بعد جب وہ گھر واپس لوٹے تو انہیں گرم کپڑے وصول کرنے والوں نے موبائیل پر کال کر کے بتایا کہ جو کپڑے آپ نے ہمیں دئیے ہیں ان میں سے ایک گرم جیکٹ کے اندر سے 6 ہزار سعودی ریال ملے ہیں جو پاکستانی تقریبا سوا دو لاکھ روپے کے قریب بنتے ہیں وہ آپ اپنی امانت واپس لے جائیں۔ آپو ورلڈ سعودیہ کی ٹیم نے اس پاکستانی کی ایمانداری پر اسکو انعام و اکرام سے نوازنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس نے دو سال سے مشکل حالات گزارنے کے باوجود ایمانداری کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا اور پاکستان کا نام فخر سے بلند کر دیا۔

خبر کو سوشل میڈیا پر شئیر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں