406

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکہ کے دیرینہ اتحادی یورپی یونین کو اپنے ملک کا دشمن قرار دے دیا

ہیلسنکی( امتیاز احمد راناسے) صدر ٹرمپ نے یہ بیان روس کے صدر ولادی میر پوٹن کے ساتھ اپنی پہلی باضابطہ سربراہ ملاقات سے عین قبل دیا ہے جس کی امریکہ اور یورپ بھر میں مذمت کی جارہی ہے۔اتوار کو امریکی ٹی وی کے ساتھ گفتگو میں اس سوال پر کہ ان کے خیال میں امریکہ کا سب سے بڑا دشمن کون ہے،صدر ٹرمپ نے کہا، “میں یورپی یونین کو ایک دشمن سمجھتا ہوں۔ آپ کو شاید وہ دشمن نہ لگیں، لیکن وہ دشمن ہی ہیں۔اپنی گفتگو میں صدر ٹرمپ نے کہا کہ روس بھی بعض معاملات میں امریکہ کا دشمن ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ صدر بننے سے قبل اور اس کے بعد بھی یورپی یونین اور مغربی ملکوں کے دفاعی اتحاد ‘نیٹو’ کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں اور گزشتہ ہفتے برسلز میں نیٹو سربراہی اجلاس کے دوران بھی انہوں نے امریکہ کے روایتی اور دیرینہ اتحادی یورپی ملکوں کو آڑے ہاتھوں لیا تھا۔

اتوار کو یورپی یونین کو دشمن قرار دینے کے بیان کی خبریں عام ہوتے ہی یورپی کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک نے اس پر فوری ردِ عمل کا اظہار کیا۔
ٹوئٹر پر اپنے ایک بیان میں ڈونلڈ ٹسک نے لکھا، “امریکہ اور یورپی یونین بہترین دوست ہیں۔ جو بھی یہ کہتا ہے کہ ہم دشمن ہے وہ جھوٹی خبریں پھیلا رہا ہے۔”

صدر ٹرمپ کا یورپی یونین سے متعلق بیان اتوار کو ایسے وقت نشر ہوا جب وہ برطانیہ کا دورہ مکمل کرکے فن لینڈ کے لیے روانہ ہوچکے تھے جہاں پیر کو دارالحکومت ہیلسنکی میں وہ روس کے صدر پوٹن کے ساتھ ملاقات کریں گے۔

اپنے ٹوئٹس میں صدر ٹرمپ نے کہا کہ اگر اس سربراہی ملاقات کے نتیجے میں روس انہیں ماسکو کا شہر بھی دے دے تو ان پر یہ تنقید ہوگی کہ وہ سینٹ پیٹرز برگ بھی ساتھ کیوں نہیں لائے۔

صدر نے اپنے ٹوئٹس میں مزید کہا کہ بیشتر امریکی ذرائع ابلاغ قوم کے دشمن ہیں اور ڈیموکریٹس کو صرف رکاوٹیں ڈالنا اور کام بگاڑنا آتا ہے۔

خبر کو سوشل میڈیا پر شئیر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں