91

آصف زرداری، فریال تالپور کے اثاثے منجمد کرنے کی سفارش

اسلام آباد(ورلڈ پوائنٹ نیوز) جعلی اکاؤنٹ کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی نے پیپلز پارٹی کے شریک چیرمین آصف زرداری اور ان کی ہمشیرہ فریال تالپور کے اثاثے منجمد کرنے کی سفارش کردی۔

جعلی اکاؤنٹ اور منی لانڈرنگ کیس میں جے آئی ٹی نے سپریم کورٹ میں نئی سفارشات جمع کرواتے ہوئے آصف زرداری، فریال تالپور، اومنی گروپ اور زرداری گروپ کے اثاثے منجمد کرنے کی سفارش کردی۔ جے آئی ٹی نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ زرداری اور اومنی گروپس نے غیر قانونی اثاثے بنائے، سرکاری فنڈز میں بے ضابطگیاں کیں اور کمیشن لیا۔

جے آئی ٹی کے مطابق دونوں گروپس نے غیر قانونی پیسہ حوالہ اور ہنڈی کے ذریعے بیرون ملک منتقل کیا جس کے شواہد موجود ہیں، لہذا عدالت سے استدعا کی جاتی ہے کہ دونوں گروپس اور ان کی ماتحت مختلف کمپنیوں کے اثاثے منجمد کردیے جائیں۔ جے آئی ٹی نے خدشہ ظاہر کیا کہ ان اثاثوں کے بیرون ملک منتقل ہونے کا خدشہ ہے، اس لیے احتساب عدالت کے فیصلے تک ان اثاثوں کو منجمد رکھا جائے۔

جے آئی ٹی نے عدالت سے درخواست کی کہ سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن (ایس ای سی پی) کو زرداری اور اومنی گروپ کے ڈائریکٹرز کی تبدیلی روکنے کا حکم بھی دیا جائے۔ جے آئی ٹی نے جن املاک کو منجمد کرنے کی سفارش کی ہے ان میں آصف زرداری، فریال تالپور اور زرداری گروپ کی تمام شہری و زرعی اراضی، نیویارک اور دبئی کی جائیدادیں، کراچی اور لاہور کے بلاول ہاؤسز، زرداری ہاؤس اسلام آباد، اومنی گروپ کی تمام شوگر ملز، زرعی و توانائی کمپنیز سمیت تمام اثاثے شامل ہیں۔

واضح رہے کہ اس کیس میں ملوث 172 افراد کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کردیے گئے ہیں جن میں آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو بھی شامل ہیں۔

سوشل میڈیا پر شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں