106

یورپی پارلیمنٹ: روس پر مزید پابندیاں عائد کی جا سکتی ہیں

برسلز(ورلڈ پوائنٹ ) یورپی پارلیمنٹ نے یورپی یونین کی جانب سے “بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کے عمل کو جاری رکھنے کی صورت میں روس پر نئی پابندیوں کا اطلاق” فیصلے کی منظوری دے دی ہے۔

فرانسیسی شہر سٹراز برگ میں یکجا ہونے والی یورپی پارلیمنٹ کی جنرل اسمبلی میں 163 منفی میں اور 89 غیر جانبدار ووٹوں کے مقابلے میں 402 ووٹوں کے ساتھ قبول کیے جانے والے فیصلے میں اس چیز کی وضاحت کی گئی ہے کہ “روس کو یوکیرین کی ملکی سالمیت کا موقع فراہم کرنا چاہیے۔”

فیصلے میں واضح کیا گیا ہے کہ روس کے شام میں 2015 سے ابتک جاری فوجی آپریشنز، لیبیا یا پھر افریقی ممالک کے اندرونی معاملات میں دخل اندازی اور یوکرین میں عدم استحکام کی طرح کے متعدد معاملات نے یورپی یونین اور ماسکو انتظامیہ کے مابین تناؤ میں اضافہ کیا ہے۔

پابندیوں کو روس کی جانب سے پیدا کردہ خطرات کی نسبت سے لاگو کیے جانے کی ضرورت کو بیان کرنے والے فیصلے میں اس امر پر بھی زور دیا گیا ہے کہ یورپی یونین کو روس کے ساتھ شراکت داری و تعاون معاہدے پر نظر ثانی کرنی چاہیے۔

علاوہ ازیں اس بات پر توجہ مبذول کرائی گئی ہے کہ اگر روس نے منسک معاہدے پر پوری طرح عمل درآمد کیا تو اس صورت میں یورپی یونین اور روس کے مابین قریبی تعلقات کا قیام ممکن ہے۔

روس کی شمالی کوریا، ایران، ونیز ویلا یا پھر شام کی حمایت پر خدشات محسوس کیے جانے کی بھی توضیح کرنے والی اس قرار داد میں پریسپا معاہدے کی مخالفت کرنے والے ممالک کی پشت پناہی کرنے پر بھی روس کے اس اقدام کے افسوسناک ہونے کا اظہار کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ یورپی یونین نے گزشتہ ماہ جون میں یوکیرین میں عدم استحکام کا ماحول پیدا کرنے کے جواز میں روس پر عائد اقتصادی پابندیوں کی مدت میں 6 ماہ کی توسیع کر دی تھی۔

سوشل میڈیا پر شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں