86

’نیا پاکستان‘ 14 اگست کو دیکھنے کو ملے گا

کراچی(ورلڈپوائنٹ) معروف ڈرامہ نویس اور لکھاری انور مقصود جہاں گزشتہ برس’کیوں نکالا‘ اسٹیج ڈرامہ پیش کیا تھا، اب وہیں ان کا ڈرامہ ’ناچ نا جانے‘ پیش کیا جا رہا ہے۔

لیکن ساتھ ہی انور مقصود ایک اور اسٹیج ڈرامہ لکھنے میں مصروف ہیں، جسے رواں برس 14 اگست سے کراچی آرٹس کونسل میں پیش کیا جائے گا۔

جی ہاں، انور مقصود ان دنوں ’نیا پاکستان‘ نامی اسٹیج ڈرامہ لکھنے میں مصروف ہیں، جو پاکستان کے حالیہ سیاسی پس منظر پر مبنی ہوگا۔

ڈان نیوز کے مطابق انور مقصود نے کراچی آرٹس کونسل میں پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ وہ احمد شاہ اور ’ناچ نا جانے‘ کے ہدایت کار داور محمود کی فرمائش پر ’نیا پاکستان‘ لکھ رہے ہیں۔

احمد شاہ اور داور حسین کی فرمائش پر نیا پاکستان لکھ رہا ہوں، انور مقصود—فوٹو: وائٹ اسٹار
ان کا کہنا تھا کہ وہ ڈرامہ نہیں لکھنا چاہتے تھے مگر چوں کہ اسٹیج فنکار اس وقت مالی مسائل کا بھی شکار ہیں اور انہیں کہیں کام نہیں مل رہا اور نہ ہی حکومت ان کے لیے فنڈز دے رہی ہے، اس لیے وہ ’نیا پاکستان‘ تشکیل دے رہے ہیں۔

انور مقصود نے ’نیا‘ لفظ پر بھی اعتراض کیا اور کہا کہ اس لفظ کو پاکستان کے ساتھ لکھے جانے کے فیصلے پر نظر ثانی کی جانی چاہیے۔

ڈرامہ نویس کا کہنا تھا کہ ہم سب نے اسی پاکستان کو بہتر بنانا ہے اور اس کے لیے جدوجہد کی ضرورت ہے۔

انور مقصود نے ’نیا پاکستان‘ کی مختصر کہانی بتاتے ہوئے بتایا کہ ڈرامے کا مرکزی کردار ایک ٹھیلے والے کا ہوگا جو ’پرانے پاکستان‘ کو بیچنے کی کوشش کرتا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ٹھیلے والا کردار ہر چیز بیچ دیتا ہے مگر وہ مکا چوک نہیں بیچ پاتا۔

انور مقصود کے مطابق انہوں نے یہ کردار علامہ اقبال کے خوابوں سے متاثر ہوکر تشکیل دیا ہے جب کہ ’نیا پاکستان‘ وہ فنکاروں کی مالی سہائتا کے لیے لکھ رہے ہیں، تاکہ ان کی مالی مشکلات کم ہوسکیں۔

پریس کانفرنس کے دوران کراچی آرٹس کونسل آف پاکستان کے صدر احمد علی شاہ اور ’ناچ نا جانے‘ کے ہدایت کار داور حسین بھی موجود تھے۔

خیال رہے کہ ’نیا پاکستان‘ کی ہدایات بھی داور حسین دیں گے اور ابتدائی طور پر اس ڈرامے کو ’کراچی آرٹس کونسل‘ میں پیش کیا جائے گا۔

کراچی کے بعد ’نیا پاکستان‘ کو دیگر شہروں میں بھی پیش کیے جانے کا امکان ہے۔

سوشل میڈیا پر شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں