154

وزیراعظم کا دورہ امریکا کے دوران کسی عالیشان ہوٹل کی بجائے سفارت خانے میں قیام کرنے کا اعلان

اسلام آباد (ورلڈ پوائنٹ) وزیراعظم کا دورہ امریکا کے درمیان کسی عالیشان ہوٹل کی بجائے سفارت خانے میں قیام کرنے کا اعلان، عمران خان 20 جولائی کو 3 روزہ دورے کے سلسلے میں امریکا روانہ ہوں گے، دورے کے دوران امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے بھی ملاقات ہوگی۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے اعلان کیا ہے کہ وہ دورہ امریکا کے دوران سرکاری خزانے پر کم سے کم بوجھ ڈالیں گے۔

وزیراعظم نے اعلان کیا ہے کہ وہ امریکا کے دورے کے دوران کسی عالیشان ہوٹل میں قیام نہیں کریں گے۔ وزیراعظم عمران خان نے جتنے روز بھی امریکا میں قیام کریں گے، اس دوران وہ واشنگٹن میں پاکستانی سفارت خانے میں ہی قیام کریں گے۔ واضح رہے کہ وزیراعظم کے مشیر خاص نعیم الحق کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ عمران خان 20 جولائی کو امریکا کیلئے روانہ ہوں گے۔

وزیراعظم کا دورہ امریکا 3 روز پر محیط ہوگا۔ اپنے دورے کے دوران وزیراعظم عمران خان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے 22 جولائی کو ملاقات کریں گے۔ جبکہ وزیراعظم 23 جولائی کو پاکستان واپس آئیں گے۔ دوسری جانب اس حوالے سے وزیرداخلہ شاہ محمود قریشی نے بتایا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیراعظم عمران خان کو امریکہ کے دورے کی دعوت دی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم عمران خان آئندہ ماہ دورے پر امریکہ جائیں گے۔

شاہ محمود قریشی نے بتایا ہے کہ دونوں ممالک نے مل کر ایک ایجنڈے پر بات کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ افغام امن عمل کے لیے بات چیت ہو گی۔ پاکستان اور امریکہ نے مل کر تجارت کو بھی آگے لے جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع کا بتانا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کا دورہ امریکا افغان امن عمل کے حوالے سے کافی اہمیت کا حامل ہوگا۔ وزیراعظم عمران خان کے دورے کے دوران افغان امن عمل کے حوالے سے بڑی پیش رفت ہونے کا امکان بھی ہے۔ واضح رہے کہ وزیراعظم منتخب ہونے کے بعد عمران خان کا امریکا کا یہ پہلا دورہ ہوگا۔ وزیراعظم کے دورے کے دوران دونوں ممالک کے درمیان حالیہ کچھ عرصے کے دوران پیدا ہونے والی کشیدگی میں کمی آنے کا بھی امکان ہے۔

سوشل میڈیا پر شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں