100

ماسکو میں اوورسیزپاکستان بلوچ یونٹی کے زیر اہتمام ایک تقریب منعقد ہوئی جس میں بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت ختم کرنے کی شدید مزمت کی گئی

ماسکو(شاہد گھمن سے) بھارت کی جانب سے ریاستی دہشتگردی اورمقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت ختم کرنے کے خلاف دنیا بھر کی طرح روس میں بھی پاکستانی سراپا احتجاج ہیں اسی صورتحال کے پیش نظر ماسکو میں اوورسیزپاکستان بلوچ یونٹی کے زیر اہتمام ایک تقریب منعقد ہوئی جس کی صدارت اوورسیز پاکستان بلوچ یونٹی کے چیئرمین ڈاکٹر جمعہ خان مری نے کی

اس موقع پر پاکستان کمیونٹی اہم شخصیات نے شرکت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر جمعہ خان مری نے کہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارتی افواج کی جانب سے 1989 سے اب تک ایک لاکھ کشمیریوں کو شہید کیا جا چکا ہے، 22 ہزار سے زائد خواتین بیوہ، 1 لاکھ 8 ہزار بچے یتیم ہوئے، 12 ہزار سے زائد خواتین کی عصمت دری کی گئی، اور اب کشمیر کی خصوصی حیثیت بھی چھین لی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیرمیں بھارت کی جانب سے مزید فورس بھجوانا، تعلیمی اداروں کو بند کروانا اور ایمرجنسی کی کیفیت بھارت کے ارادوں کا پتہ دے رہے تھے، بھارت کی طرف سے لوک سبھا کا اجلاس بلا کر مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت کا تعین کرنے والے 370 آرٹیکل اور 35 اے کا خاتمہ بین الاقوامی قوانین کی صریحاً خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم کشمیری عوام کے ساتھ یکجہتی کرتے ہوئے حکومت پاکستان کے ساتھ کھڑے ہیںاور وقت آنے پر کشمیری عوام کی خاطر جان ومال کی قربانی سے بھی دریغ نہیں کریں گے

اوورسیز پاکستان بلوچ یونٹی کے صدر ملک شہباز نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی اور ظلم و تشدد کی سخت الفاظ میں مزمت کی۔انہوںنے کہا کہ انڈین پولیس اور سرکاری اداروں نے وہاں کے لوگوں کی زندگیوں کو اجیرن کر رکھا ہے اوربھارتی دہشتگردی اب اپنی انتہا کو پہنچ چکی ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر زاہد علی خان ، عزیز بلوچ ، امتیاز چانڈیو، ڈاکٹرمجاہد مرزا، چوہدری زاہد خورشیدنے اپنے اپنے خطاب میںپرزور انداز میں کشمیر میں ہونے والی ناانصافیوں کے خلاف ماسکو اور ملک کے دوسرے علاقوں میں یکجہتی کے دن منانے اور مختلف احتجاجی پروگراموں کو ترتیب دینے کا فیصلہ کیا جن میں اقوام متحدہ کے دفترمیںاحتجاجی یادداشت پیش کرنے کے ساتھ ساتھ جنوبی ایشیائی ملکوں کے ساتھ ملکر solidarity کا دن منایا جائے گا اور مسئلہ کشمیر کو ہر پلیٹ فارم پر اجاگر کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ روسی زبان میں پمفلٹ چھپواکر تقسیم کئے جائیں گے جبکہ کشمیری مسلمانوں پر ڈھایے جانے والے ظلم پرروسی اور اردو زبان میں ایک کتاب بھی چھپوائی جائے گی تاکہ روسی عوام کشمیر میں بھارتی بربریت اور مظالم ان کے سامنے عیاں ہوسکیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان سمیت پوری دنیا کے مسلمانوںکو بھارت اور اس کی مصنوعات کا بائیکاٹ کرنا چاہیے ۔

سوشل میڈیا پر شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں