85

بیگم کلثوم کے جنازے کیلیے نواز شریف، مریم، صفدر کی پیرول پر رہائی کا امکان

لاہور(ورلڈ پوائنٹ نیوز) بیگم کلثوم کے جنازے میں شرکت کیلیے نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی اڈیالہ جیل سے پیرول پر رہائی کا امکان ہے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کا کینسر کے باعث لندن کے اسپتال میں انتقال ہوگیا ہے۔ نواز شریف کے بھائی شہباز شریف اپنے بیٹے سلمان شہباز کے ہمراہ بیگم کلثوم نواز کی میت وطن لانے کے لیے آج ہی لاہور سے پہلی دستیاب فلائٹ کے ذریعے لندن روانہ ہوں گے۔

اطلاعات کے مطابق میت واپس لانے اور جنازے میں شرکت کے لیے نوازشریف کے لندن روانگی سے متعلق قانونی پہلوؤں پر غور کیا جارہا ہے۔ تاہم ای سی ایل میں نام ہونے کے باعث نوازشریف کو بیرون ملک جانے کے لیے ہائیکورٹ سے خصوصی اجازت لینی ہوگی۔ قوی امکان ہے کہ نواز شریف اہل خانہ سے مشاورت کے بعد ہائیکورٹ سے رجوع کریں گے۔

جیل قوانین کے تحت کسی بھی قیدی کے قریبی رشتے دار کے انتقال پر نمازجنازہ میں شرکت کے لیے محدود وقت کے لیے پیرول پر ضمانت دی جاسکتی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ نواز شریف ، مریم نواز اور کیپٹن صفدر پیرول پر ضمانت کی درخواست ڈپٹی کمشنر کو دیں گے جسے یہ اجازت دینے کا اختیار حاصل ہے۔

قانون کے تحت پیرول پر قیدی کو پانچ گھنٹے کے لیے رہائی ملتی ہے۔ ان پانچ گھنٹوں میں نماز جنازہ میں شرکت لیے جیل سے آنے جانے کا وقت شامل نہیں ہوتا۔

کلثوم نواز کے دونوں بیٹے حسن اور حسین نواز بھی نیب ریفرنس میں مطلوب ہیں۔ اس لیے میت کے ہمراہ ان کی وطن واپسی کے مسئلے اور مختلف قانونی آپشنز پر بھی غور کیا جارہا ہے۔

نیب مقدمے میں اشتہاری ہونے کی وجہ سے نواز شریف کے دونوں صاحبزادوں کو پاکستان واپسی پر گرفتار کرلیا جائے گا۔

قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ پاکستان واپسی کیلئے حسن اور حسین نواز کو حفاظتی ضمانت لینا ہوگی، جس کیلئے اہل خانہ سے مشورے کے بعد درخواست دائر کی جاسکتی ہے۔

سوشل میڈیا پر شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں