165

دوسری جنگ عظیم کے سبق کو فراموش کرکے جارحانہ منصوبوں کی سازش کرنے والوں کومعاف نہیں کیا جائے گا، صدر پوتن

ماسکو(شاہد گھمن سے) دوسری جنگ عظیم میں نازی جرمنی سے عظیم الشان فتح کا 76 سالہ جشن بھرپور شان و شوکت سے منایا گیا۔ روس دوسری جنگ عظیم 45-1941 میں نازی جرمن سے فتح کا جشن ہر سال 9 مئی کو بھرپور طریقے سے مناتا ہے ۔دارالحکومت ماسکو کے ریڈ سکوائر پر ملک کی سے سب سے بڑی پریڈ کا اہتمام کیا گیا۔ اس پریڈ 12 ہزار سے زائد فوجی جوانوں، زمینی فوجی سازو سامان کے 190 سے زائد یونٹس نے حصہ لیا جبکہ 76 کے قریب طیاروں اور ہیلی کاپٹرز نے ریڈ سکوائر کے اوپر پرواز میں حصہ لیا۔۔پریڈ میں 36 کے قریب فوجی دستوں نے مارچ کیا ۔پریڈ کی قیادت روسی وزیر دفاع سرگئی شائیگو نے کی۔ جبکہ اس پریڈ میں تاجکستان کے صدر امام علی رحمان نے خصوصی طور پر شرکت کی۔

روس کی فضائیہ نے دارالحکومت اور ملک کے دیگر شہروں میں بھی بھرپور فضائی شو کا مظاہرہ کیا۔

روسی صدر ولادیمیر پوتن نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہاکہ وہ لوگ جو دوسری جنگ عظیم کے سبق کو فراموش کرکے ایک بار پھر جارحانہ منصوبوں کی سازش کررہے ہیں روس ان کو ہرگز معاف نہیں کرے گا۔

صدر پوتن نے اس طرف اشارہ کیا کہ نسلی اور قومی برتری اور روسی فوبیا کے نعرے اس وقت سے زیادہ سے زیادہ سنسنی خیز لگ رہے ہیں۔ جب یورپ کے نازی درندے تقریباً ایک صدی پہلے طاقت اور تعصب اختیار کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی جنگ کو روکنے کے لئے تیار کردہ معاہدوں کو آسانی سے ختم کردیا گیاہے۔

صدر پوتن نے زور دے کر کہا کہ تاریخ سے نتیجہ اخذ کرنے اور سبق سیکھنے کی ضرورت ہے لیکن ، بدقسمتی سے ، نازیوں کے بہت سارے نظریے ، وہ لوگ جو اپنی استثنیٰ کے فریب نظریے میں مبتلا تھے ، دوبارہ متحرک ہونے کی کوشش کر رہے ہیں۔

پوتن نے یاد دلایا کہ 2021 میں عظیم جنگ کے آغاز سے اب 80 سال ہو جائیں گے۔ انہوں نے زور دیا کہ 22 جون 1941 تاریخ کی المناک تاریخوں میں سے ایک ہے۔ “دشمن نے ہمارے ملک پر حملہ کیا ، ہماری سرزمین پرہمیں مارنے اور تکلیف دینے کے لئے آیا۔ وہ نہ صرف سیاسی نظام ، سوویت نظام کو ختم کرنا چاہتا تھا ، بلکہ ہمیں تباہ کرنے کے ساتھ ساتھ ہماری ریاست کو تباہ کرنا چاہتا تھا۔

پوتن نے کہا کہ سوویت عوام نے اپنے وطن کا دفاع کیا اور یورپ کے ممالک کو “براؤن طاعون” سے آزاد کرایا اور میدان جنگ میں ہتھیاروں کی طاقت ، اپنے اخلاقی حق کی مضبوطی سے نازی ازم کو شکست فاش سے دوچارکیا۔۔
صدر پوتن نے کہا کو روسی قوم کی قربانیوں کو کبھی فراموش نہیں کیا جائے گا انہوں نے دوسری جنگ عظیم حصہ لینے اور اگلے مورچوں پر لڑنے والے فوجی جوانوں، ان کی خدمت کرنے والے ڈاکٹروں اور نرسوں کو خراج تحسین پیش کیا۔

روسی صدر پوتن نے خطاب سے پہلے تاجکستان کے صدر کے ساتھ مل کر کریملن کے دیوار کے ساتھ شہدا اور نامعلوم سپاہی کی قبر پر پھول چڑھائے۔۔

یوم فتح کے موقع پرصبح 10بجے آتش کا مظاہرہ کیا گیا جبکہ دوسری جنگ عظیم کے شہدا کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے توپوں کی سلامی بھی پیش کی گئی۔

خبر کو سوشل میڈیا پر شئیر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں