229

ماسکو میں کورونا میں تیزی کے باعث نئی پابندیاں عائد

ماسکو(شاہد گھمن سے)روس میں کورونا وائرس نے ایک بار پھر سر اٹھانا شروع کردیا جس کے باعث ماسکو کے حکام نے جزوی پابندیاں عائد کردی ہیں

ماسکو کے میئر سرگئی سوبیانین نے 13 جون سے 20 جون تک جزوی پابندیاں عائد کرتے ہوئے ایک غیر ورکنگ ہفتہ کا اعلان کیا ہے تاکہ کورونا وائرس کی بڑھتی ہوئی تعداد پر قابو پایا جاسکے۔ماسکو حکام کی جانب سے نئی پابندیوں کے مطابق بڑی کمپنیاں صرف 30 فیصد ملازمین کو کام پر بلاسکیں گی۔

جبکہ، چڑیاگھر، شاپنگ سنٹرز کے فوڈکورٹس، پلے گراونڈز، بچوں کے کھیلنے کے مقامات بند رہیں گے ریسٹورنٹ، بار اور کیفے رات گیارہ بجے سے صبح 6 بجے تک بند رہیں گے۔ 65 سال سے زائد عمر کے افراد کو سفر نہ کرنے اور گھروں میں رہنے کی تلقین کی گئی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ ماسک اور گلوز پر سختی سے عملدرآمد کرنا ہوگا ماسک اور دستانے نہ پہننے والوں کو 5 ہزارروبل جرمانہ کیا جائے گا۔

ماسکو مئیر کا کہنا ہے کہ روس میں آج سب سے زیادہ کیسز سامنے آئے ہیں جو دسمبر 2020 کے بعد ریکارڈ اضافہ ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ ماسکو میں اس وقت 100 سے زائد ویکسین سنٹرز پر شہریوں کو مفت ویکسین لگائی جارہی ہے اس لئے شہری جلدازجلد ویکسین لگوائیں
روس میں اب تک 1کروڑ 39لاکھ 92 ہزار 323 افراد ویکسین کی دونوں خوراکیں جبکہ 1 کروڑ 82 لاکھ 74 ہزار820 افراد ویکسین کی پہلی خوراک حاصل کر چکے ہیں۔ لیکن اس کے باوجود گزشتہ 24 گھنٹوں میں روس بھرمیں کورونا وائرس کے 13 ہزار 510 نئے کیسیز سامنے آئے ہیں اور 399 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

اب تک کے اعدادوشمار کے مطابق روس میں اب تک 51لاکھ 93 ہزار964 افراد کورونا وائرس کا شکار ہوئے اور ان میں سے 47 لاکھ 92 ہزار169 افراد صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ اب تک اس وبا سے 1لاکھ 26 ہزار 73 افراد موت کے منہ میں جا چکے ہیں،

خبر کو سوشل میڈیا پر شئیر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں